Badam Khane Ke Fayde

بادام - almond benefits in Urdu - janeay badam ki taseer aur badam khane ke fayde - khane ka sahi tarika - badam rogan ke fayde

Badam Khane Ke Fayde

بادام کو صرف غذا کے طور پر استعمال نہیں کیا جاتا، بلکہ یہ ایک بہترین دوا بھی ہے۔ بادام کو دماغ کی تقویت کے لیے ایک پیش بہا چیز سمجھا جاتا ہے۔ گرمیوں میں اس کو پیس کر ٹھنڈائی کے طور پر اور جاڑوں میں جریدے کے طور پر استعمال کیا جاتا ہے۔

بادام کی ایک قسم کڑوی بھی ہوتی ہے۔ تلخ بادام کو اگر زیادہ مقدار میں کھایا جاۓ تو معدے میں زیریلا اثر پیدا ہو سکتا ہے۔ ایک دو بادام تک تو مضائقہ نہیں لیکن زیادہ مقدار میں تلخ بادام ہرگز استعمال نہیں کرنا چاہیے۔ میٹھے بادام بہت لذیذ ہوتے ہیں اورانہیں ذیباطیس کے مریض بھی اعلی غذا کے طور پر استعمال کر سکتے ہیں۔ میٹھے بادام سے روغن بھی نکالا جاتا ہے جسے تقویت دماغ کے لیے بہترین جانا گیا ہے۔

بادام غذا کا نہایت اہم جزو ہے اور خشک پھلوں میں بھی بادام کو امتیازی حیسیت حاصل ہے۔ بادام ایسے حیات بخش اجزاء سے بھرا ہوا ہے جو جسمانی ساخت کی تعمیر اور درازی عمر کے کفیل ہوتے ہیں۔

بادام میں موجود غذائیت

غذائی اعتبار سے بادام میں مواد لحمیہ یعنی پروٹین ہوتا ہے جوخون کی پیدائش اور جسم کی تعمیر میں اہم حصہ لیتا ہے۔ بادام میں موجود مواد لحمیہ کی مقدار گوشت اور مچھلی سے زیادہ ہوتی ہے۔ بادام میں جسم کے افعال درست رکھنے والے اور صحت کے محافظ اجزا بھی نہایت وافر مقدار میں پاۓ جاتے ہیں۔

badam khane ke fayde

اس میں گاۓ کے گوشت سے دس گنی وٹامن بی 1 (تھیامین)، انڈوں سے دو گنی مقدار میں وٹامن بی 2 (ریبوفلیون)، اور سالم گندم کے برابر وٹامن بی 3 (نیاسین) ہوتی ہے۔ اس کے اندر حفیف مقدار میں وٹامن (ای) بھی پائی جاتی ہے۔ معدنیات کےاعتبار سے اس میں کیلسیم ہوتا ہے جو ہڈیوں اور دانتو‌ں کے استحکام اور نشوونما کیلیے لازمی ہے۔

بادام حاملہ عورتوں کی حفظ صحت اور جنین (اخصاب کے عمل سے لیکر ماں کے پیٹ میں آٹھویں ہفتے کے اختتام تک کی حالت) کی بالیدگی کے لیے لازمی، نوجوانوں اور بوڑھوں کے قلب کو توانا رکھنے کیلیے نہایت ضروری ہے۔ بادام میں پنیر کے برابر فاسفورس بھی ہوتا ہے اور معدنیات کے لحاظ سے آئرن کی مقدار بکرے کے گوشت سے بھی زیادہ ہوتی ہے۔

badam ke taseer

 

بادام کے فائدے

σ

گلے کو صاف کرتا ہے اور خراش کو دور کرتا ہے۔

σ

ہر روز رات کو سوتے اگر بارہ گریاں بادام کی استعمال کی جائیں تو صبح کو اجابت آسانی سے اور کھل کر ہو گی۔ جن حضرات کا معدہ کمزور ہو، وہ سات عدد بادام کے ساتھ چھ ماشہ سونف اور چھ ماشہ مصری پیس کر سوتے وقت گرم دودھ کے ساتھ استعمال کریں۔

σ

دائمی قبض کے لیے بادام کا متواتر استعمال بے حد مفید ہے۔

σ

سات عدد بادام، ایک تولہ مصری کے ساتھ رات کو سوتے وقت کھا لیا کریں اس سے آپ کی نظر تیز ہو جاۓ گی اور دماغ کو بھی طاقت میسر ہو گی۔

اکیس عدد بادام ہر روز چبا کر کھا لیا کریں اس طرح آپ کی آنکھوں سے پانی بہنا بند ہو جاۓ گا۔

σ

سات عدد بادام کی گریاں، مصری چھ ماشہ، چھ ماشہ سونف کو کوٹ کر سفوف تیار کر لیں اور ہر روز رات کو گرم دودھ  کیساتھ استعمال کریں مگراس کے بعد پانی کا استعمال منع ہے۔ یہ نسخہ متواتر استعمال کرنے سے یقینی طور پر عینک سے چھٹکارا مل جائیگا۔

σ

یرقان کا مرض رنگت کو زرد کر دیتا ہے، مریض کی آنکھیں اور پیشاب بالکل زرد ہو جاتا ہے بلکہ مرض پرانا ہو جانے پر ناخن اور تمام بدن پر بھی زردی آ جاتی ہے۔ اس کیلۓ بادام کی ٹھنڈائی کا استعمال بے حد مفید ہے۔

badam rogan ke fayde

σ

اگرحاملہ عورت ساتوں مہینے سے چھوٹا چمچہ روغن بادام رات کو سوتے وقت پینا شروع کر دے تو بچہ کی پیدائش میں سہولت ہوتی ہے۔

σ

متواتر اکیس دن کے با پرہیز استعمال سے ضعف دماغ کی شکایت دور ہو جاتی ہے۔

σ

ایک خوراک جو اگر مندرجہ ذیل طریقے سے بنائی جاۓ، جسے بوقت صبح کھا لینے سے طبیعت تمام دن مسرور رہتی ہے۔ نسخہ تیار کرنے کا طریقہ یہ ہے: بادام سات عدد، الائچی چارعدد، عمدہ چھوارہ ایک مصری پانچھ تولہ، اور گاۓ کا مکھن پانچھ تولہ لیجیۓ۔ اب بادام اور چھوہارہ کو رات کے وقت مٹی کے کورے برتن میں پانی ڈال کر بھگو دیں صبح باداموں کو چھیل لیں اور چھوہارہ کی گٹھلی کو دور کریں۔ الائچی کے دانہ کو نکال لیں اور خوب پیس لیں۔ پھر مصری ملا کر باریک کریں، آخر میں مکھن ملائیں اورنوش فرمائیں۔

badam sehat ke leay aik zaroori ghiza ha

σ

بادام مقوی دل اور دماغ کو تسکین دیتا ہے۔

σ

بادام معدہ اورسوزش کیلۓ موثر اور بے حد مفید ہے۔

Read in Roman Urdu / Roman Hindi

Badam ko sirf ghiza ke tor par istemaal nahi kya jata, balkay yeh aik behtareen dawa bhi hai. Badam ko dimagh ki taqwiyat ke liye aik paish baha cheez samjha jata hai. Garmiyon mein is ko pees kar thandie ke tor par aur jarhon mein jareeday ke tor par istemaal kya jata hai.
Badam ki aik qisam karvi bhi hoti hai. Talkh badam ko agar ziyada miqdaar mein khaya jae to maiday mein zehrila assar peda ho sakta hai. Aik ya do karvi badam tak to muzaika nahi lekin ziyada miqdaar mein talkh badam hargiz istemaal nahi karna chahiye. Meethay badam bohat lazeez hotay hain aur unhen sugar ke mareez bhi aala ghiza ke tor par istemaal kar satke hain. Meethay badam se roghan bhi nikala jata hai jisay taqwiyat dimagh ke liye behtareen jana gaya hai.
Badam ghiza ka nihayat ahem juz hai aur khushk phalon mein bhi badam ko imtiazi hasiat hasil hai. Badam aisay hayaat bakhash ajzaa se bhara hwa hai jo jismani saakht ki taamer aur darazi umar ke kafeel hotay hain.

BADAM MEIN MOJOOD GHIZAIYAT

Ghizai aitbaar se badam mein mawaad lahmia yani protein hota hai jo khon ki paidaiesh aur jism ki taamer mein ahem hissa laita hai. Badam mein mojood mawaad-e-lahmia ki miqdaar gosht aur machli se ziyada hoti hai. Badam mein jism ke afaal durust rakhnay walay aur sehat ke muhafiz ajza bhi nihayat waafar miqdaar mein pae jatay hain.
Es mein gae ke gosht se das guni vitamin B1 (thiamine), andon se do guni miqdaar mein vitamin B2 (riboflavin), aur salim gandum ke barabar vitamin B3 (niacin) hoti hai. Es ke andar hafeef miqdaar mein vitamin E bhi payi jati hai. Madniyaat ke aitbaar se is mein calcium hota hai jo hadion aur dantoo ke istehkaam aur nashonuma ke liye laazmi hai.
Badam haamla aurton ki hifz-e-sehat aur janeen (Ehsaab ke amal se leker maa ke pait mein aathween haftay ke ekhtataam tak ki haalat) ki baleedgi ke liye laazmi, nojawanon aur borhoon ke qalb ko tawana rakhnay ke liye nihayat zaroori hai. Badam mein paneer ke barabar phosphorus bhi hota hai aur madniyaat ke lehaaz se iron ki miqdaar bakray ke gosht se bhi ziyada hoti hai.

BADAM KE FAIDAY

1. Galay ko saaf karta hai aur kharaash ko daur karta hai.
2. Har roz raat ko sotay waqt agar baara (12) giryaan badam ki istemaal ki jayen to subah ko ajabat aasani se aur khul kar ho gi. Jin hazraat ka maida kamzor ho, woh saat adad badam ke sath chay mashah sonf aur chay mashah misri pees kar sotay waqt garam doodh ke sath istemaal karen.
3. Daimi qabz ke liye badam ka mutawatar istemaal be had mufeed hai.
4. Saat (7) Adad badam, aik tola misri ke sath raat ko sotay waqt kha liya karen is se aap ki nazar taiz ho jae gi aur dimagh ko bhi taaqat muyassar ho gi.
5. Ikees (21) Adad badam har roz chaba kar kha liya karen is terhan aap ki aankhon se pani behna band ho jae ga.
6. Saat (7) Adad badam ki giryaan, Misri chay mashah, chay mashah sonf ko koot kar safoof tayar kar len aur har roz raat ko garam doodh kay sath istemaal karen magr es ke baad pani ka istemaal mana hai. Yeh nuskha mutawatar istemaal karne se yakeeni tor par ainak se chhutkara mil jaaye ga.
7. Yarqaan ka marz rangat ko zard kar deta hai, mareez ki ankhen aur pishaab bilkul zard ho jata hai balkay marz purana ho jane par naakhun aur tamam badan par bhi zardi aa jati hai. Es ke liay badam ki thandae ka istemaal be had mufeed hai.
8. Agar haamla aurat satwe mahinay se chota chamcha roghan badam raat ko sotay waqt pina shuru kar day to bacha ki paidaiesh mein sahoolat hoti hai.
9. Mutawatar ikees din ke ba-parhaiz istemaal se zeaf dimagh ki shikayat daur ho jati hai .
10. Aik khoraak jo agar mandarja zail tareeqay se banai jae, jisay ba-waqt subah kha lainay se tabiyat tamam din masroor rehti hai. Nuskha tayyar karne ka tareeqa yeh hai : Badam saat Adad, alaichi 4 adad, umdah chuara aik misri paanch tola, aur gaae ka makhan paanch tola lejiay. Ab badam aur chuara ko raat ke waqt miti ke kore bartan mein pani daal kar bigho den, subah badamoo ko chheel len aur chuara ki ghutli ko daur karen. Alaichi ke dana ko nikaal len aur khoob pees len. Phir misri mila kar bareek karen, aakhir mein makhan milaain aur noosh farmaen.
11. Badam maqwi-e-dil aur dimagh ko taskeen deta hai.
12. Badam maida aur sozish ke liay moasar aur behad mufeed hai.